۔،۔ جرمنی میں بسنے والی پاکستانی کمیونٹی لاوارث نہیں،سفارتخانہ اور قونصلیٹ ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ نذر حسین۔،۔
٭سفیر پاکستان ڈاکٹر محمد فیصل نے فوراََ لواحقین سے دلی تعزیت کے لئے قونصل جنرل آف پاکستان فرینکفرٹ زاہد حسین اور ہیڈ آف چانسلری شعیب منصور کو سٹٹگارٹ روانہ کر دیا٭
شان پاکستان جرمنی برلن:فرینکفرٹ۔ سفیر پاکستان ڈاکٹر محمد فیصل کو جیسے ہی اطلاع ملی۔پاکستانی سفارتی حلقوں میں سوگ کا عالم چھا گیا انہوں نے سٹٹگارٹ کے نزدیکی قونصل خانہ فرینکفرٹ سے رابطہ کیا جس پر قونصل جنرل آف پاکستان فرینکفرٹ زاہد حسین اور ہیڈ آف چانسلری شعیب منصور نے فوری طور پر، سیاسی،مذہبی،کاروباری اور سماجی شخصیت شیخ منیر سے رابطہ کیا اور سٹٹگارٹ روانہ ہو گئے، کمیونٹی کے افراد اور پولیس افسران سے میٹنگ کی کمیونٹی کو پوری یقین دہانی کروائی کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں سفارتخانہ اور قونصلیٹ آپ کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ،لواحقین سے دلی تعزیت کی اور انہیں ہر قسم کی مدد کی یقین دہانی کروائی پولیس کو کمیونٹی کے ساتھ تعاون اور ملزمان کو جلد سے جلد گرفتار کرنے کی ہدایات دیں اس موقع پر شیخ منیر، جاوید بھٹی، لالہ محمد طفیل، چوہدری آصف، محمد نواز، شیخ روحیل منیر، شیخ سرمد منیر اور خطیب مسجد المدینہ مولانا شوکت مدنی بھی میٹنگ میں موجود تھے۔ ہیڈ آف چانسلری شعیب منصور نے شان پاکستان سے بات کرتے ہوئے ہر قسم کی مدد کی یقین دہانی کروائی ان کا کہنا تھا کہ قونصل جنرل آف پاکستان زاہد حسین نے پولیس افسران کو ڈیڈ باڈی کے بارے ہدایات جاری کیں کہ ہمیں مذہبی ذمہ داریاں پوری کرنے کے لئے جلد سے جلد مرنے والے کی باڈی چاہیئے تا کہ ہم جلد سے جلداسے پاکستان منتقل کر سکیں۔چھبیس26 سالہ پاکستانی نوجوان کو پیر کی شام ایبرس باخEbersbach کے علاقہ میں نامعلوم افراد نے اچانک حملہ کر کے نامعلوم وجوعات کی بنا پر شہید کر دیا نوجوان کو شدید چوٹیں آئی تھیں جن کی وجہ سے و ہ زندہ نہ بچ سکا، قاتل فرار ہونے میں کامیاب۔ پولیس ترجمان کے مطابق ایمرجنسی سروسز کو شام 18:00 Uhrبجے اطلاع دی گئی پولیس فوراََ موقع پر پہنچ گئی لیکن چھبیس سالہ پاکستانی نوجوان شاہد نواز قادری کی جان نہ بچائی جا سکی وہ جائے وقوعہ پر ہی دم توڑ چکا تھا۔پولیس ترجمان کے مطابق قاتلوں کو ڈھونڈنے کے لئے ہیلی کاپٹر کا استعمال بھی کیا گیا اور پولیس ٹیم نے علاقے کا چپہ چپہ چھان مارا لیکن کوئی کامیابی نہ حاصل کر سکی۔فوجداری پولیس نے خصوصی پولیس کمیشن تشکیل دی ٹیم نے تفتیش شروع کر دی ہے واقعات کے دوران یا مبینہ مرتکب افراد کے بارے میں ابھی تک مزید مفصل معلومات نہیں مل سکیں،تفتیش جاری ہے پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ ملزمان کو عنقریب گرفتار کر لیا جائے گا۔ سرکاری وکیل اور پولیس کے مطابق 26 سالہ شاہد نواز قادری اور اس کی 30 سالہ اہلیہ شام 18:00 Uhrبجے اپنے رہائشی علاقہ ایبر باخ فلز Ebersbach/Fils سیر کے لئے نکلے تھے،کنکریٹ کے راستے انڈر پاس کے قریب دو نامعلوم افراد ہمارے قریب آئے انہوں نے اچانک شاہد نواز کو مارنا شروع کر دیا زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے وہ زمین پر گر گیا مجھے بھی معمولی زخم آئے اس کے بعد نامعلوم افراد فرار ہو گئے یہ کہنا تھا چھبیس سالہ نوجوان کی 30 سالہ اہلیہ کا، مرنے والا اسٹٹگارٹ کی مسجد کا امام تھا،۔ پولیس نے اپیل کی ہے کہ اگر کسی شخص نے پیر کی شام کو 17:30 Uhr اور 18:30 Uhrبجے کے درمیان کسی مشکوک شخص یا گاڑی کو دیکھا ہو،جائے وقوعہ کے نزدیک ایک شخص جس نے گرین رنگ کی جیکٹ اور ٹوپی پہنی ہوئی تھی جس کی عمر چالس 40 اور پچاس 50 سال تھی اور قد 1,75 m وہ تفتیش کاروں کے لئے اہم گواہ کی حیثیت رکھتا ہے۔ اگر اس کے علاوہ معلومات فراہم کر سکتا ہو تو کرائم برانچ کی پولیس کو برائے کرم اس فون نمبر 0731-1880 پر مطلع کریں۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے