۔،۔حکمران عوام نہیں آئی ایم ایف کوخوش کررہے ہیں: شہزادحسن وٹو ۔،۔
تبدیلی سرکار نے بھی ملک وقوم کوقرض کے گہرے کنویں میں دھکادے دیا

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی نائب صدر میاں شہزادحسن وٹوایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ نااہل حکمران عوام کورنجیدہ جبکہ آئی ایم ایف کوخوش کررہے ہیں۔جس کپتان نے دھرنے کے دنوں میں آئی ایم ایف اورورلڈبنک کے پاس کسی صورت نہ جانے کا بلندبانگ دعویٰ کیا تھا وہ بھی اپنے اقتدار کے دوام کیلئے عالمی مالیاتی اداروں کی دہلیز پرسجدہ ریزہوگیا۔تبدیلی سرکار نے بھی ملک وقوم کوقرض کے گہرے کنویں میں دھکادے دیا۔نااہل تبدیلی سرکار کے اڑھائی سال میں قوم پربیرونی قرض اورسود کا بوجھ مزید کئی گنا بڑھ گیا۔ تعجب ہے قرض اتارنے کیلئے مزید قرض لیاجارہا ہے جبکہ اس کاسارابوجھ بیچارے عوام برداشت کررہے ہیں۔کپتان قرض سے نجات تک پاکستان کوریاست مدینہ نہیں بناسکتے،قومی معیشت میں خیروبرکت کیلئے اسے ہرقسم کے سود سے پاک کیاجائے۔ اسلامی جمہوریہ پاکستان کی معیشت میں سود کی نحوست ناقابل برداشت ہے۔اپنے ایک بیان میں میاں شہزادحسن وٹوایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ نااہل حکومت اورناکام اپوزیشن کے درمیان بلیم گیم سے عوام کوقطعی کوئی دلچسپی نہیں،دونوں کی ترجیحات عوامی ضروریات سے مطابقت نہیں رکھتیں۔ حکومت اوراپوزیشن کے منفی طرز سیاست سے ریاست کے قومی مفادات خطرے میں پڑگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کپتان کے بیانات اوراقدامات میں بدترین تضادات سے معاشرے کاہرسنجیدہ طبقہ رنجیدہ ہوگیا ہے۔تبدیلی سرکار اورجیالی سرکار کوصرف اورصرف آئینی مدت پوری کرنے میں دلچسپی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک کو معاشی چیلنجز کامقابلہ کرنے کیلئے حکمرانوں کے پاس ویژن اورایجنڈا نہیں ہے۔ مقروض ملک کے حکمران پچھلے اڑھائی سال سے ہوشربا مراعات کے مزے لے رہے ہیں،کاش یہ شرم سے ڈوب مرتے۔انہوں نے کہا کہ حکمران یادرکھیں بیانات نہیں دوررس اقدامات سے نظام بدلے گا۔عوام نااہل کپتان کی ڈینگیں سن سن کرزچ ہوگئے ہیں۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے