۔،۔ ریاست کیلئے قرض سے بڑاکوئی مرض نہیں:محمدناصراقبا ل خان۔،۔
ملک ترقی نہیں کرسکتے:رضاایڈووکیٹ،تنویرخان،وسیم قریشی،سلمان پرویز،شہزادوٹو
حکمران مراعات سے دستبردارہوں:سلطان حسن،ناصرچوہان،شکیل اعوان،یونس ملک

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدر محمدناصراقبال خان،مرکزی سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ،مرکزی چیف آرگنائزر اشفاق احمدکھرل ایڈووکیٹ،مرکزی سینئر نائب صدو ر تنویرخان،مخدوم وسیم قریشی ایڈووکیٹ،سلمان پرویز،محمداشرف عاصمی ایڈووکیٹ،مرکزی نائب صدور ناصرچوہان ایڈووکیٹ، ملک شکیل اعوان،شہزادحسن وٹوایڈووکیٹ،ممتازاعوان،ایڈیشنل سیکرٹری جنرل سلطان حسن بٹ،صدر پنجاب محمد یونس ملک،سینئر نائب صدورمہر محمدسلیم،رانافیاض امین ایڈووکیٹ،صدرشیخوپورہ عمران حیدر،صدرقصور میاں ا ویس علی نے کہا ہے کہ کسی ریاست کیلئے قرض سے بڑاکوئی مرض نہیں۔بیرونی قرض پرانحصار کرنیوالے ملک ترقی نہیں کرسکتے۔قرض سے نجات کیلئے خودانحصاری اورخوددداری کوفروغ دیاجائے۔حکومت عوام پرمزیدبوجھ ڈالنا چھوڑ دے اوروسائل پیداکرنا شروع کرے۔مقروض ملک کے حکمران اورمنتخب ارکان ہرقسم کی مراعات سے دستبرداری کااعلان کریں۔ہوشربا مہنگائی سے عام آدمی کامعیارزندگی بہت متاثر ہورہا ہے۔پاکستان کاعوام ضروریات اورسہولیات کیلئے ایڑیاں رگڑ رہے ہیں جبکہ حکمران طبقہ قومی وسائل پر پل رہا ہے۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔مقررین نے مزید کہا کہ کاروباری طبقات کوٹیکس چھوٹ دی جائے،اس سے عوام کی زندگی میں بھی خاطرخواہ آسانی آئے گی۔بیرونی قرض اورقومی معیشت کودرپیش مرض سے نجات کیلئے ملک میں زرعی انقلاب برپا کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ زرعی اراضی پر دھڑا دھڑ سوسائٹیز بنانے کامجرمانہ سلسلہ بندکرناہوگا۔منتخب حکومت فوری طور پرریاست کی بقاء اورشہریوں کی فلاح وبہبود کیلئے دوررس معاشی،اقتصادی اورزرعی اصلاحات یقینی بنائے۔انہوں نے کہا کہ ہنرمندوں اورکسانوں کاروزگار اوراعتماد بحال کیاجائے۔ریاست ہرکسی کوملازمت نہیں دے سکتی لہٰذا ء تجارت کے فرو غ کیلئے شہریوں کومعاشی طورپرخودکفیل بنانے کی ضرورت ہے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے