۔،۔ جرمنی کے شہر فرینکفرٹ میں کورونا ٹیکہ کے خلاف مظاہرہ۔نذر حسین۔،۔

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ۔ جرمنی کے علاقہ فرینکفرٹ برگ، ایشرس ہائیم، بونامس وغیرہ کے علاقوں میں گاڑیوں کا جلوس نکالا گیا گاڑی پر لگے لاوڈ سپیکر پر اعلان کیا جا رہا تھا کہ کورونا کا ٹیکہ مت لگوائیں اس سے کئی اموات واقع ہو چکی ہیں واضح رہے کوویڈcovid-19 کا وجود سامنے آنے کے فوراََ بعد جرمن ڈاکٹروں German Doctors for education(Enlightenment) کی ایک ٹیم سامنے آئی جن کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس ایک وائرس ہے جو کہ ہر سال کی طرح آنے والا وائرس ہے یہ اتنا خطرناک نہیں جتنا اس کو بتایا جاتا ہے جس کا ثبوت پیش کرتے ہوئے ان کا کہنا ہے کہ سال 2019 میں موسمی فلو سے ایک لاکھ اور تیس ہزار افراد کی صرف جرمنی میں موت واقع ہوئی جبکہ کورونا کے سال یعنی 2020 میں ابھی تک جرمنی میں صرف 68,343 اموات ہوئی ہیں جبکہ 61657 کم ہیں اسی سلسلے میں جب سے کورونا کے ٹیکے لگائے جا رہے ہیں اور ہر روز اموات کی تعداد بڑھتی نظر آ رہی ہے۔ جرمنی میں ابھی تک صرف اسی سال سے اوپر کے افراد کو ٹیکے لگائے جا رہے ہیں جبکہ عمر رسیدہ افراد کی سہولت کے لئے ان کو ٹیکسی کے ووچر Voucher بھی دیئے جا رہے ہیں کہ لوگ جلد سے جلد ٹیکے لگوا لیں اس کے برعکس German Doctors for education(Enlightenment) اور مقامی افراد نے شہر سے باہر کالونیوں میں گاڑیوں کے جلوس نکالے جا رہے ہیں جن میں بوڑھے افراد کو وارننگ دی جا رہی ہے کہ ٹیکہ نہ لگوائیں۔ دوسری طرف حکومتی اعلان کے مطابق ان کا بھی کہنا ہے کہ وہ عنقریب گھروں میں ٹیسٹ کرنے کی سہولت دینا چاہتے ہیں کہ لوگوں کو آسانیاں دی جائیں کیونکہ لاک ڈاون سے بہت پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ویڈیو

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے