۔،۔ آسٹر زینیکاکی ویکسی نیشن کے لئے عمر کی حد میں تجدیدات بحث و مباحثہ کا سبب بنی ہوئی ہے۔نذر حسین۔،۔


٭ 31 مارچ کے حوالہ سے AstraZeneca پر اعتماد ختم بھی ہو سکتا ہے٭

٭بیونٹک اور فائزر کی ویکسی نیشن کومیرنیٹیComirnaty ایم آر این اے mRNAاپریل 7 اور 18 تک دستیاب ہونے کی امید ہے جس کے ملنے پر فیملی ڈاکٹرز بھی ویکسی نیشن کر پائیں گے، آنے والے ہفتوں میں مزید ویکسین جیسے آسٹرازینیکا AstraZeneca اور ویکٹر ویکسی نیشن بھی شامل کی جائیں گی٭
شان پاکستان جرمنی برلن۔آسٹرا نینیکا کا ٹیکہ (ویکسی نیشن) لگانے کے لئے عمر کی حد میں نئی تجدیدات بحث و مباحثے کا سبب بنی ہوئی ہے جبکہ یورپی یونین کے دوائیوں کے ادارے۔ای۔ایم۔اے۔ EMA۔(European Medicines Agency)ابتدائی طور پر ویکسی نیشن کے استعمال پر پابندی کا مشورہ نہیں دیتا ہے۔ ای۔ایم۔اے۔ کے سربراہ ایمر کوک Emer Cooke نے کہا ہے موجودہ سائنس کے مطابق اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ کسی بھی آبادی والے گروپ میں اس ویکسین کے استعمال پر پابندی لگائی جائے۔ European Medicines Agency یورپین میڈیسن ایجنسی کی طرف سے ایک تازہ کاری (حقیقت کو پیش کرنے)کی سفارش 6 اپریل سے 9 اپریل تک متوقع ہے جبکہ جرمنی میں صرف 60 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کے لئے ویکسی نیشن کے استعمال کی تجویز دی گئی ہے۔ ای۔ایم۔اے کے بیان کے مطابق کوویڈ Covid-19 کو روکنے میں آسٹرا زینیکا ویکسین کے فوائد ضمنی اثرات کے خطرات سے کہیں زیادہ ہیں، ای ایم اے نے ویکسی نیشن سے متعلق لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ اگر انہیں انتہائی معمولی خون کے جمنے کا امکان بھی ہو یا ایسے علامات پیدا ہوں فوری طور پر طبی مشورہ لینا چاہیئے۔ ابھی تک جائزہ میں کسی خاص خطرے کے عوامل جیسے عمر، جنس یا خون میں ٹکڑوں کا انکشاف نہیں ہوا ہے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنا ئزیشن کو بھی ابھی تک کوئی پریشانی نظر نہیں آتی۔ان کا کہنا ہے کہ آسٹرا زینیکا AstraZeneca ویکسین کے استعمال کے لئے ایک مثبت اشارہ ملتا ہے ٭رسک سے فائدے کا تناسب٭اس کے استعمال کے حق میں زیادہ ملتا ہے۔ بہش سی ریاستوں میں واقعات کی انتباہی نظام موجود ہے اور انہیں کسی قسم کی پریشانی کی اطلاع نہیں ملی۔ 31 مارچ کے حوالہ سے AstraZeneca پر اعتماد ختم بھی ہو سکتا ہے۔ اسٹیکو کے باس مرٹنز کے مطابق آسٹرا زینیکا ویکسین کے اعتماد میں کمی بھی واقع ہو سکتی ہے جبکہ ایس پی ڈی ماہر صحت لاوٹر باخ Lauterbach کے مطابق ویکسی نیشن مہم پر کسی قسم کے اثرات کی توقع نہیں کرتے۔ رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ پال ایرلش انسٹی ٹیوٹ Paul-Ehrlich-Instituts کے کنٹرول فنکشن کے مطابق ابھی تک 30 سے زیادہ تشویشناک واقعات درج کرائے گئے ہیں،خطرے کی گھنٹی بجنے کے بعد شدت سے جانچ پڑتال کی گئی اب ہم حقیقت میں اعتماد پیدا کرنا چاہتے ہیں کہ AstraZeneca سے ویکسی نیشن کروانے میں کوئی حرج نہیں۔وفاقی حکومت نے گذشتہ روز صرف 60 سال سے زیادہ عمر کے افراد پر ایسٹرا زینیکا ویکسین ٹیکے لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کا پس منظر خاص طور پر کم عمر خواتین میں تھرومبوسس ہے۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ایک اور دو پولیو والے گروپوں میں کم عمر افراد، ڈاکٹر کی صوابدید پر اور محتاط معلومات کے بعد انفرادی رسک کے تجزیے کے ساتھ، ویکسین پلانے والے ڈاکٹر کے ساتھ مل کر فیصلہ کرسکتے ہیں، چاہے وہ ایسٹرا زینیکا سے ٹیکہ لگائیں۔ ہیسن کی ریاست میں ابھی تک آسٹرا زینیکاAstraZeneca جسے اب واکس زیرویا ٭ Vaxzevria٭ کہا جاتا ہے سے 31 افراد میں خون کے جمنے کیThrombosis cases رپورٹ سامنے آئی ہے اس غیر یقینی حالت میں بھی ہیسن کی حکومت Vaxzevria سے ویکسی نیشن جاری رکھے ہوئے ہے، ہیسن کے منسٹر پریذیڈنٹ کا کہنا ہے کہ جب میری باری آئے گی تو مجھے بھی آسٹرا زینیکا لگائی جائے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے