۔،۔ خدمت کے بغیر سیاست ریاست کوراس نہیں آتی:سلطان حسن بٹ۔،۔
محض معاشرے میں اسٹیٹس کیلئے منتخب ایوانوں میں جا نابوجھ اور بے سود ہے

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی ایڈیشنل سیکرٹری جنرل سلطان حسن بٹ نے کہا ہے کہ خدمت کے بغیر سیاست ریاست کو راس نہیں آتی۔جو ملک وقوم کی انتھک خدمت کاجذبہ نہیں رکھتا اس کاایوان میں کوئی کام نہیں۔ عوام دولتمندوں کی بجائے سیاسی وانتظامی امور کی بااحسن بجاآوری کیلئے دانشمندوں، مخلص اورمدبر نمائندوں کومنتخب کریں۔محض معاشرے میں اسٹیٹس کیلئے منتخب ایوانوں میں جا نابوجھ اوربے سود ہے،وہاں صرف وہ جائے جو خدمت خلق کومقدس مشن سمجھتاہو۔نیب زدگان کا چمک کے بل میں بار بار ایوان میں آناایک بڑاسوالیہ نشان ہے۔پیپلزپارٹی،مسلم لیگ (ن) اور پی ٹی آئی والے ایک دوسرے کے ارکان اسمبلی توڑنے کیلئے سیاسی وفاداریوں کی قیمت لگاتے ہیں، ضمیرفروشی نے جمہوریت کوشرمندہ کردیا۔اپنے ایک بیان میں سلطان حسن بٹ نے مزید کہا کہ ہم لوگ بلدیات سے صوبائی وقومی اسمبلیوں اور سینیٹ کے انتخابات تک ہرسطح پرشفافیت کے حامی ہیں۔ آئین کی رو سے الیکشن کمشن انتخابی سیاست میں زراورزورکااستعمال روکنے کاپابند ہے لیکن وہ ایساکرنے میں ناکام رہا۔انہوں نے کہا کہ اگر اس بار بھی سینیٹ کے انتخابات میں ووٹ فروخت ہوئے اورایک بار پھر سیاست اورجمہوریت کاتقدس پامال ہوا۔ہارس ٹریڈنگ ایک ناسور ہے،قومی سیاست کواس نجاست سے پاک کیاجائے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے قائداعظمؒ کے سیاسی فلسفہ کی روشنی میں بار بار انتخابی،سیاسی،معاشی اورانتظامی اصلاحات پرجہاں زوردیا وہاں مثبت تجاویزبھی دی ہیں۔پاکستان میں معیشت اورجمہوریت کی مضبوطی کیلئے فوری اصلاحات پرکام شروع کیاجائے۔انہوں نے کہا کہ ریاستی اداروں اورعوام کے درمیان موثررابطہ ریاست اورمعیشت کی مضبوطی کاسبب بنے گا۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے