۔،۔ بھارت سے عداوت ہے،تجارت نہیں ہوسکتی: محمدناصراقبال خان۔،۔
مودی سرکار کے آشیرباد سے انتہاپسندہندوطبقہ مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلتا ہے

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدر محمدناصراقبال خان نے کہا ہے کہ بھارت کوانسانیت کے ساتھ عداوت ہے، انتہاپسند ریاست سے تجارت نہیں ہوسکتی۔بھارت میں مودی سرکار کے آشیرباد سے انتہاپسندہندوطبقہ مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلتا ہے،وہ تجارت تودرکنا سفارتی تعلقات کے بھی قابل نہیں۔معلوم نہیں نااہل حکمرانوں کواس قسم کے بیہودہ مشورے کون دیتا ہے۔بزدار برانڈ حکمران قومی معیشت کی آڑ میں قومی حمیت پرحملے نہ کریں۔ جموں وکشمیر کی آزادی تک بھارت کے ساتھ ایک پائی کی تجارت کاتصور نہیں کیا جاسکتا۔ دنیا کی ہر وہ ریاست جوانسانیت سے محبت کی داعی ہے وہ بھارت کوناپسندیدہ ریاست ڈکلیئراوراس کے ساتھ ہرقسم کی تجارت بندکردے۔اپنے ایک بیان میں محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ بھارت میں ریاست کی سطح پرانسانوں کے حقوق روندے جارہے ہیں،اس کے ساتھ کسی قسم کی تجارت انسانیت کے ساتھ بدترین عداوت شمار کی جائے گی۔ بھارت میں ایک سازش کے تحت انسانیت کوتابوت میں بندکرکے اسے گنگا برد کردیا گیا،وہاں اسلام اورسکھ سمیت دوسرے ادیان پرکاربند انسان ایڑیاں رگڑ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارت مذمت کی زبان نہیں سمجھتا،اس کی بھرپور مرمت نہ کی گئی تووہ راہ راست پرنہیں آئے گا۔بھارت میں شہری حقوق کی صورتحال انتہائی “مندی” ہے لہٰذاء اسے محض ایک تجارتی” منڈی” سمجھنا مناسب نہیں۔انہوں نے کہا کہ عالمی ضمیر کومعیشت کی بجائے انسانیت کیلئے سوچنا ہوگاکیونکہ انسانیت کے بغیر معیشت کی کوئی وقعت نہیں ہے۔کوئی طاقتور ملک کسی کمزور ریاست کے وسائل پرنہیں جھپٹ سکتا۔انہوں نے کہا کہ فلسطینی اورکشمیری عوام کوامن،آزادی،بنیادی حقوق اورانصاف کی فراہمی تک عالمی ضمیر کوزندہ تصور نہ کیاجائے۔

ایڈیٹرچیف نذر حسین کی زیر نگرانی آپ کی خدمت میں پیش ہے