۔،۔ نیوزی لینڈ کا پاکستان کے خلاف شرمناک کردار۔( پہلو۔صابر مغل ) ۔،۔


جمعتہ المبارک کے روز راولپنڈی کے انتہائی حساس علاقے میں قائم راولپنڈی کرکٹ سٹیڈیم میں 18سال بعد پاکستان کا دورہ کرنے والی نیوی لینڈ کرکٹ ٹیم کا قومی ٹیم کے ساتھ ڈے اینڈ نائٹ ون ڈے میچ کی تیاریاں عروج پر تھیں،25فیصد(4500)شائقین کرکٹ جو مکمل ویکسی نیشن تھے سٹیڈیم پہنچ چکے تھے سیکیورٹی انتظامات کے حوالے سے50سے زائد مقامات پر پولیس کا پہرہ،چار ہزار پولیس افسران و اہلکار،350ٹریفک اہلکار،لیڈی پولیس،ڈولفن کے علاوہ خصوصی طور پر پاک فوج اور رینجر کے دستے مہمان ٹیم کی حفاظت پر مامور تھے،سٹیڈیم جانے والے ہر شخص کی میٹل ڈیکٹیٹر،بائیو میٹرک چیکنگ اور واک تھرو گیٹ نصب جبکہ سٹیڈیم روڈ،مری روڈ اور شمس آباد کی تمام بڑی عمارتوں پر پاک فوج کے مایہ ناز اسنائپرز تعینات تھے،اسی دوران پہلی افواہ آئی کہ کیویز کھلاڑیوں میں سے چند ایک کو کورونا ہو گیا ہے،پھر پتہ چلا کہ مہمان ٹیم کو ان کی انتظامیہ نے ہوٹل سے باہر نکلنے پر پابندی لگا دی ہے جیسے جیسے ان باتوں نے عروج پکڑا تب پاکستانی حکومت،پاکستان کرکٹ بورڈ اور پوری قوم میں تشویش کی لہر نے جنم لینا شروع کر دیا پھر وہ کچھ ہوا جو کرکٹ کی تاریخ میں ٓج تک نہیں ہوا میچ کے مقررہ وقت سے چند منٹ قبل 2.45نیوزی لینڈ ٹیم کی انتظامیہ نے سیکیورٹی تھریٹ کا بہانہ کرتے ہوئے دورہ کو منسوخ کرنے ککا با ضابطہ اعلان کر دیا یہ اعلان نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا بھر میں غیر متعصب شائقین کرکٹ پر بجلی بن کر گرا،ماضی میں بھی سب سے زیادہ نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ہی دورے ادھورے چھوڑے مکمل مگر یہ فیصلہ اور نوعیت کا منفرد،بھونڈا،افسوسناک،شرمناک،قابل مذمت،اخلاقیات سے کوسوں دور تھا،نیوزی لینڈ کا شمار دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں ہوتا ہے جہاں تہذیب و تمدن جسی روایات کو بہتر سمجھا جاتا ہے مگر اس کی اس گھٹیا حرکت نے ثابت کر دیا کہ متعصب قومیں چاہیں جتنی بھی ترقی کر لیں،جتنی بھی تہذیب یافتہ ہو جائیں بالآخر نیچ پن کا مظاہرہ ان کی شرست میں ضرور شامل ہوتا ہے،پاکستان کی سیکیورٹی دنیا کی مایہ ناز اور قابل فخر ہے یہ دنیا کا واحد ملک ہے جس نے درجنوں ممالک کی آشیر باد سے یہاں چھیڑی گئی دہشت گردی کی جنگ کو تباہ و برباد کیا،شکست سے دوچار کیا،پاکستان کے تام سیکیورٹی ادارے دنیا بھر میں ایک اعلیٰ مقام رکھتے ہیں،اس انوکھے فیصلے کا وزیر اعظم پاکستان کو دو شنبہ میں بتایا گیا جنہوں نے فوراً نیوزی لینڈ کی ہم منصب جیسنڈا آرڈن کو کال کی دورہ منسوخ کرنے پر راضی کرنے کی کوشش کی مگر جب سب کچھ کسی بڑی منصوبہ بندی کے تحت ہو تو ایسی کالز بے معنی ہو جاتی ہیں اور یہی کچھ ہوا ان کا کہنا تھا کہ میچز نہ ہونا مایوس کن مگر کھلاڑیوں کا تحفظ بہت اہم ہے،نیوزی لینڈ کرکٹ کے چیف ایگزیکٹو نے کہا ہمیں جو تجاویز موصول ہوئیں ان کو مد نظر رکھتے ہوئے اس دورے کو جاری رکھنا ممکن نہیں تھا،ٹیم کے ساتھ آئے آفیشلز کے مطابق پاکستان میں سیکیورٹی خدشات کی وجہ سے دورہ ختم کرنے کا علان کیا اور یہ اقدام اپنی حکومت کی منظوری سے کیاگیا،نیوزی لینڈ کرکٹ پلیئر ایسویسی ایشن کے چیف ایگزیکٹو ہیتھ ملز نے بھی کہا ہم اس سارے عمل میں شامل تھے اور اس فیصلے کی حمایت کرتے ہیں نیوزی لینڈ کی ٹیم کے دورہ پاکستان کو حتمی شکل دینے سے قبل دنیا کے سب سے معروف سیکیورٹی ماہر ریگ ڈیگاس نے پاکستان آ کر سیکیورٹی سے متعلق تمام انتظامات اور اقدامات کا جائزہ لیا اور ان کے مکمل اطمینان اور حتمی رپورٹ کے بعد نیوزی لینڈ نے اپنی ٹیم کو دورہ پاکستان کی اجازت دی،ریگ ڈیگا نہ صرف نیوزی لینڈ بلکہ آئندہ ماہ دورہ پاکستان کرنے والی ٹیم انگلینڈ کے بھی سیکیورٹی کنسلٹنٹ ہیں،انگلینڈ کی ٹیم اگلے ماہ دو ٹی ٹونٹی میچز کھیلنے پاکستان آنا ہے اب اسے بھی تحفظات پیدا ہو گئے ان کے مطابق وہ آئندہ دو روز میں حتمی فیصلہ کریں گے کہ دورہ پاکستان پر ٹیم کو بھیجنا ہے کہ نہیں،عجب بات ہے پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے انتہائی فول پروف انتظامات کو عملی شکل تک دے دی تھی یہی ٹیم دو دن تک سٹیڈیم میں نیٹ پریکٹس کرتی رہی،مگر اچانک ہوا کیا جس کی پاکستان کی کسی ایجنسی کو خبر نہ ہوئی،پاکستان کی سیکیورٹی ایجنسیاں اتنی بھی لاعلم نہیں دنا بھر میں ان کا ڈنکا بجتا ہے مگر نیوزی لینڈ کی ٹیم نے یہ سب تعصب،غیر جانبداری اور کسی سیاسی دباؤ کے تحت کیاجس کا بنادی مقصد پاکستان بلکہ اس کی ایجنسیوں کو رسوا کرنا تھا،نیوزی لینڈ کو اگر کسی تھریٹ کا سمانا کرنا پڑا تو اسے چاہئے تھا کہ وہ ہمارے ذمہ داران کو اس سے آگاہ کرتا پہلی بات تو یہ ممکن ہی نہیں کہ بات نیوزی لینڈ سے آنے والے مہمانوں تک پہنچ جائے اور ہمارے مایہ ناز ادارے لا علم رہیں یہ سب جھوٹ بہتان اور الزام تراشی ہے،نیوزی لینڈ نے اس دورہ کے دوران تین ون ڈے اور پانچ ٹی ٹونٹی میچز کھیلنے تھے اسی ٹیم نے ICCکے مطابق آئندہ سال تین ون ڈے اور دو ٹیسٹ میچز کھیلنے پاکستان آنا ہے یہ ون ڈے میچ آئی سی سی سپرلیگ کا حصہ ہیں،پاکستان کی ایک طرف تو نیوزی لینڈ کے اس غیر اخلاقی اقدام پر ICCجا رہا ہے دوسری طرف یہ عندیہ بھی سامنے آیا ہے کہ وہ ان منسوخ شدہ میچز کو اگلے دورے میں ایڈجسٹ کرانے کی کوشش کرے گااگر ایسا ہوا تو قوم کی بہت دل آزاری ہو گی اور ہماری خود داری پر بھی حرف آئے گا،یہ انتہائی بری خبر جنگل کی آگ کی طرح دنیا بھر میں پھیل گئی،لوگ ششدر اور متحیر رہ گئے کہ ہوا کیا؟ابھی تک یقین نہیں آ رہا کہ ایسی گھٹیا صورتحال بھی پیدا ہو سکتی ہیے کیویز کا نہ منفی عمل دنا بھر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا،وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کے مطابق یہ عالمی سازش ہے جو کے پیچھے اندرونی و بیرونی دونوں ہاتھ ہیں ایسے عوامل بھی شامل ہیں جنہوں نے دستانے پہن رکھے ہیں،وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ایسی کوئی صورتحال نہیں تھی جس کا بہانہ بنا کر نیوزی لینڈ نے اچانک واپسی کا فیصلہ کیا،سابق چیر مین کرکٹ بورڈ خالد محمود نے کہا یہ بات صرف کرکٹ کی نہیں بلکہ اس کا براہ راست تعلق خطے میں رونما ہونے والی تبدیلیوں سے جڑا ہے،چیر مین کرکٹ بورڈ رمیز راجہ نے اپنا سخت رد عمل دیتے ہوئے کہا ہمیں اپنے کھلاڑیوں اور شائقین سے دلی ہمدردی ہے یہ بات اس لئے بھی مایوس کن ہے کہ نیوزی لینڈ نے سیکیورٹی دھمکی کو بنیاد بنا کر دورہ ختم کرنے کا یکطرفہ فیصلہ دیاہم سے کچھ بھی شیئر نہیں کیا گیا نیوزی لینڈ کس دنیا میں رہتا ہے اب وہ ہمیں آئی سی سی میں ملے گا، پاکستان کو اس دورہ کی منسوخی سے جہاں ڈیڑہ ملین ڈالر کا مالی نقصان ہوا اس سے کہیں بڑھ کر دنیا بھر میں اس کی ساکھ کو بہت بڑی سازش،منصوبہ بندی کے تحت پروان چڑھایا گیا،قومی ٹیم کے کپتان بابر اعظم جنہوں ایک شام قبل کیوی کپتان ٹام لاتھم کے ساتھ ٹرافی کی رونمائی میں حصہ لیا تھا نے کہا یہ سیریز مسکراہٹیں واپس لاسکتی تھی ہمیں اپنی سیکیورٹی ایجنسیوں کی صلاحیتوں اور ساکھ پر پورا بھروسہ ہے وہ ہمارا فخر ہیں اور ہمیشہ رہیں گی،شاہد آفریدی نے کہا تمام یقین دہانیوں کے باوجود سیکورٹی خدشات کا بہانہ بنا کر بھاگنا شرمناک ہے اس نے پاکستان کی کرکٹ کا قتل کیا ہے،عمر گل نے کہا یہ ایک افسوسناک دن تھا جس سے ہمار امیج متاثر کرنے کی پوری کوشش کی گئی اب ہمیں عالمی سطع پر نیوزی لینڈ کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہو گا،شعیب اختر نے کہا پاکستان کرائسٹ چرچ میں ہونے والی دہشت گردی جس میں 9پاکستانی بھی شہید ہوئے نیوزی لینڈ کے ساتھ کھڑا رہا مگر اب نیوزی لینڈ کا رویہ بہت برا تھا،جاوید میاں داد نے بھی اسے انتہائی غلط فیصلہ قرار دیا،نیوزی لینڈ کے سابق کھلاڑی اور معروف کمنٹیٹر ڈین موریسن بھی اس فیصلہ کو یکطرفہ اور غلط قرار دیاہے،ویسٹ ابڈیز کے شرنین رتھر فورنے کہا پاکستان محبت کرنے والوں کا ملک اور کرکٹ کے لئے محفوظ ہے،ڈیرن سیمی نے کہا اس نے پاکستان کو ہمیشہ محفوظ ملک تصور کیا ہے،پاکستان کے معروف دانشور اور سابق چیر مین کرکٹ بورڈ نجم سیٹھی نے فرمایا ہے کہ یہ پاکستان کے خلاف کوئی سازش نہیں ضرور کوئی ایسی بات ہے جس کا علم مہمان ٹیم کو آخری منٹوں میں علم ہوا جس پر یہ فیصلہ ہوا، اب یہ کیویز خصوصی چارٹرڈ طیارے کے طیارے کل شام واپس روانہ ہو چکے ہیں جو پہلے متحدہ عرب امرات اور وہاں سے نیوزی لینڈ پلٹ جائیں گے، 1987میں کیویز دورہ سری لنکا پر تھے کہ پہلے ٹیسٹ کے بعد کولمبو میں بم دھماکے جس میں 100سے زائد ہلاکتیں ہوئیں دورہ ختم پڑنا تھا،1992ایک بار نیوزی لینڈ کی ہی ٹیم اسی ملک سری لنکا کے دورہ پر تھی کہ ہوٹل کے قریبی علاقے میں بم دھماکے بعد دورہ منسوخ ہوا،2001یہ ٹیم دورہ پاکستان کے لئے روانہ ہوئی اور ابھی سنگا پور ہی پہنچی تھی کہ اس دوران نائن الیون کا واقعہ پیش آ گیا اور کیویز سنگا پور سے ہی وطن واپس لوٹ گئے،2007میں کیویز کراچی میں تھے ٹیسٹ میچ کے لئے ہوٹل سے نکلنے سے قبل پاکستان میں فرانسیسی انجینئرز کوخود کش حملے میں ہلاکت کی خبر آئی تو کیویز دورہ ختم کر گئے،بہرحال یہ مہمان ٹیم کے اس فیصلہ پر ساری قوم غم و غصہ سے بھری ہوئی اس دوران ہماری سرکردہ شخصیات کی جانب سے غیر ذمہ درانہ دانشوری بھی باعث تشویش ہے۔۔