۔،۔ حکمران بھارت کے ساتھ تجارت سے باز رہیں:ناصر چوہان۔،۔
٭اوورسیزپاکستانیوں نے بھی امپورٹڈ حکومت کا عاقبت نااندیشانہ فیصلہ مسترد کر دیا٭

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی سینئر نائب صدر ناصر عباس چوہان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ اتحادی حکمران بھارت کے ساتھ تجارت کیلئے کیوں ہلکان ہورہے ہیں،وہ اس شرمناک اقدام سے باز رہیں۔اوورسیزپاکستانیوں سمیت ہم وطنوں نے بھی امپورٹڈ حکومت کا عاقبت نااندیشانہ فیصلہ مسترد کر دیا۔ مودی سرکار کی طرف سے جموں وکشمیر پرشب خون کے باوجودبھارت کے ساتھ تجارت کیلئے حکومت پاکستان کی عجلت ایک بڑاسوالیہ نشان ہے۔بھارت کے ساتھ تجارت کی صورت میں قومی حمیت کاجنازہ اٹھ جائے گا،ہم اپنے معتوب کشمیری بھائی بہنوں کاسامنا کس طرح کریں گے۔اپنے ایک بیان میں ناصرعباس چوہان ایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ بھارت میں مسلمانوں سمیت کشمیریوں کیلئے خطرہ مزید بڑھ گیالہٰذاء شہبازحکومت دشمن ریاست کے ساتھ تجارت سے گریزکرے۔ بھارتی مسلمانوں سمیت دوسری اقلیتوں کو ہرطرح کے تعصب اورتشددسے بچاناہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اگراقوام متحدہ نے فوری،ٹھوس اورسخت ایکشن نہ لیا تو بھارت میں پیداہونیوالی بے یقینی اوربے چینی مینارٹیز کوشدیداحتجاج اوراپنے دفاع کیلئے مزاحمت پرمجبورکردے گی۔ عالمی ضمیریقینا مذاہب کی بنیادپر نفرت،تصادم اورتشدد کامتحمل نہیں ہوسکتا۔انہوں نے کہا کہ عالمی ضمیربھارت میں کسی قسم کاسانحہ رونماہونے سے قبل اس نفرت کونابود کردے ورنہ وہاں مسلمانوں کاپیمانہ صبر لبریز ہوجائے گا۔ پاکستان شہیدوں اورغازیوں کی سرزمین ہے۔ قیام پاکستان سے استحکام پاکستان تک ہمارے شہیدوں کا مادر وطن اورامن وانسانیت سے والہانہ محبت کاقرض کبھی نہیں چکایاجاسکتا۔انہوں نے کہا کہ جس غیورقوم کے نڈر فرزند جام شہادت نوش کرتے ہوئے اپنے گرم لہو سے ماں دھرتی کو سیراب کرتے ہیں وہ کبھی بانجھ یابنجرنہیں ہوسکتی، ہماری حمیت دشمن ریاست کے ساتھ تجارت گوارہ نہیں کرے گی۔ مسلمانوں اورپاکستانیوں سے زیادہ دنیا میں کوئی امن پسندنہیں ہوسکتا۔انہوں نے کہا کہ چندگمراہ عناصر کے قول وفعل کی سزاپوری قوم کونہیں دی جاسکتی۔ ہماری سکیورٹی فورسز مادروطن کوامن وآشتی کاگہوارہ بنانے کیلئے کوئی کسر نہیں چھوڑیں گی۔انہوں نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے قدرت نے پاکستان کے دشمنوں کو دیدہ عبرت بنادیا۔آج ہماراباشعوراوربیدارنوجوان پاکستان کے روشن مستقبل کی علامت اورضمانت ہے۔