۔،۔ حکمران ملک وقوم اورقانون کے ساتھ مذاق بند کردیں:الطاف شاہد۔،۔
٭بھارت کے ساتھ تجارت میں عجلت ناقابل فہم اورناقابل برداشت ہے٭

پاک سر زمین پارٹی برطانیہ کے صدر چوہدری محمد الطاف شاہدنے کہا ہے کہ منتخب وزیراعظم کی ایک مفرور کی صدارت میں ہونیوالے اجلاس میں شرکت ایک بڑاسوالیہ نشان ہے، اتحادی حکمران ملک وقوم اورقانون کے ساتھ مذاق بند کردیں۔ بھارت کے ساتھ تجارت میں عجلت ناقابل فہم اورناقابل برداشت ہے۔بھارت کے ساتھ تجارتی تعلقات کیلئے معتوب کشمیریوں کی قربانیوں پرسمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا۔ اتحادی حکومت کی ریاستی ترجیحات عوامی ضروریات اورریاست کے قومی مفادات سے ہرگز مطابقت نہیں رکھتیں،انہیں فوری بدلناہوگا ورنہ عوام کاپیمانہ صبر لبریزہوجائے گا۔مہنگائی کاآدم خور بھوت نادار ومفلس عوام کونگل رہا ہے۔آئے روز اپنے ہاتھوں سے اپنی زندگی ختم کرنے کے دلخرا ش واقعات رونماہوناریاستی نظام پرعدم اعتماداور ایک بڑاسوالیہ نشان ہے۔ اپنے ایک بیان میں چوہدری محمد الطاف شاہد نے مزید کہا کہ شہریوں کے بنیادی حقوق کی حفاظت اورانہیں درپیش مسائل سے نجات آئینی طورپر ریاست کاکام ہے۔شہریوں کے حقوق غصب کرنیوالے مختلف مافیاز کوقرارواقعی سزادی جائے۔ انہوں نے کہا کہ منافرت کاسومنات پاش پاش کرنے اور مساوات کے فروغ کیلئے معاشرے میں دوررس اصلاحات اور شعوربیدارکرنے کی ضرورت ہے۔ عوام کے پیچیدہ مسائل پرفوکس کرتے ہوئے انہیں بنیادی حقوق اور انصاف کی بروقت فراہمی یقینی بنائی جائے۔قانون کی حکمرانی کے بغیر تعصب اورتشددکارجحان ختم نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بات بات پرشاہراہیں بند،توڑپھوڑ اور جلاؤگھیراؤ کرنا معمول بن گیا ہے۔ احتجاج کی آڑمیں شاہراہیں بنداورتوڑپھوڑکرنیوالے شرپسند عناصر کواس قسم کے انتہائی اقدام سے روکناہوگا کیونکہ گاڑیوں کی آمدورفت معطل ہونے سے مریضوں اوربچوں سمیت ہزاروں لوگ بری طرح متاثرہوتے بلکہ کئی بارتوبیگناہ شہری بے موت مارے جاتے ہیں۔پرتشدداحتجاج کومیڈیاکوریج نہ دی جائے جبکہ پرامن احتجاج کیلئے ملک بھرمیں مقامات مخصوص کئے جائیں۔انہوں نے کہا کہ اسلامی ریاست میں نمازوں کے اوقات کے دورا ن لوڈشیڈنگ ناقابل برداشت ہے،حکومت کی نااہلی کاعذاب نمازی کیوں جھیلیں۔محرومیوں کے مارے عوام کاغم وغصہ فطری ہے لیکن صبروتحمل کادامن ہاتھ سے نہ چھوڑاجائے۔