۔،۔عدلیہ آئین کی محافظ، حکمران اتحاد ڈکٹیشن نہیں دے سکتا:وسیم قریشی۔،۔
٭جہاں آئین وقانون شکنی ہوگی، وہاں نظام عدل اپناتعمیری کرداراداکرے گا٭

انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی سینئر وائس چیئرمین مخدوم وسیم قریشی ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ آزاد عدلیہ آئین کی محافظ، متحدہ حکومت میں شریک کوئی اتحادی ڈکٹیشن نہیں دے سکتا۔عدلیہ کی آزادی کیلئے پرویزی آمریت کاتابوت نابو دکرنیوالے قانون دان آج بھی اس کاہراول دستہ ہیں۔جہاں جہاں آئین وقانون شکنی ہوگی، وہاں وہاں نظام عدل اپنا تعمیری کرداراداکرے گا۔ اتحادی سیاستدان عدالت عظمیٰ کومخاطب کرتے وقت اپنے لہجے اوراپنی لفاظی پرضرورغورکرلیا کریں۔اپنے ایک بیان میں مخدوم وسیم قریشی ایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ عدالت عظمیٰ میں براجمان منصف قانون کی حکمرانی اورانصاف کی فراوانی کیلئے کوشا ں ہیں۔جوسیاستدان اپناکام سلیقہ سے نہیں کرسکتے وہ عدلیہ کواس کاآئینی کردار سیکھانے کی زحمت نہ کریں۔انہوں نے کہا کہ پنجاب بار کونسل کے مستعد سیکرٹری اشرف راہی ایڈووکیٹ کی شہادت ناقابل برداشت ہے، کالے کوٹ پرسرخ خون کے چھینٹوں سے ملک میں انقلاب آئے گا۔اشرف راہی ایڈووکیٹ کی شہادت یقینا رائیگاں نہیں جائے گی، انہوں نے انتھک محنت سے متعدد جعلی وکلاء کوبے نقاب کیا۔انہوں نے کہا کہ اشرف راہی ایڈووکیٹ کی شہادت سے ملک بھر کے قانون دان حالت سوگ میں ہیں، ان کے قتل میں ملوث شرپسندعناصر کوفوری گرفتار کرکے انہیں لاہور ہائیکورٹ چوک میں تختہ دار پرلٹکایاجائے۔انہوں نے کہا کہ اگر کسی فردواحد یا گروہ کو آزاد عدلیہ کیخلاف مہم جوئی کاشوق ہے تووہ فوجی آمر پرویز مشرف کے آمرانہ دور کاانجام فراموش نہ کرے۔