۔،۔ شعیب احمد بٹ کے والد کی وفات پر پاکستان جرمن پریس کلب۔شان پاکستان کا اظہار افسوس۔ نذر حسین۔،۔

٭،جرمنی کی سماجی شخصیت شعیب احمد بٹ کے والد محترم محمد صدیق بٹ جو کہ ضلع گجرات کی ممتاز سیاسی و سماجی شخصیت تھیں،صحافت کے میدان میں نمایاں اور گرانقدرخدمات سر انجام دینے والی شخصیت تھیں کی وفات پر پاکستان جرمن پریس کلب اور شان پاکستان جرمنی کے عہدہ داران کا اظہار افسوس٭اِنَا لِلّہِ وَ اِنَا اِلَیہِ رَاجِعُونَ٭

شان پاکستان جرمنی فرینکفرٹ/آفن باخ۔ پاکستان جرمن پریس کلب کے عہدہ داران۔ سلیم پرویز بٹ، نذر حسین، رضوان شاہ، عطا الرحمن اشرف، شبیر احمد کھوکھر، جاوید اقبال بھٹی اور دیگر عہدہ داران نے شعیب احمد بٹ جو کسی تعارف کے محتاج نہیں سے ان کے والد محمد صدیق بٹ جو کہ ضلع گجرات کی ممتاز سیاسی و سماجی شخصیت جانے جاتے تھے،صحافت کے میدان میں ان کی نمایاں اور نہ بھولنے والی گرانقدر خدمات تھیں اور آپ جرمنی میں بھی ہر محفل کے چمکتے ستارے تھے کی وفات پر گہرے دُکھ کا اظہار کرتے ہیں،پاکستان جرمن پریس کلب اور شان پاکستان کے عہدہ داران آپ کے غم میں برابر کے شریک ہیں، ہماری دُعا ہے کہ اللہ کریم ان کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے،جب مومن پر موت پیش ہوتی ہے تو فرشتے مشک و عنبر اور ریشمی کپڑے لے کر اس کے پاس آتے ہیں اور اس کی روح نکالتے ہیں، اسے کہتے ہیں اے نفس مطمئنہ اپنے رب کی طرف رجوع کر تو اس سے راضی اور وہ تجھ سے راضی ہے۔اللہ کی امانت تھی، جو کچھ تقدیر میں لکھا تھا وہ ہو کر رہنا تھا اور وہ ہو کر رہا،جو اللہ کرتا ہے وہی برحق ہوتا ہے۔اب ہمارا کام صبر ہے جس کا ہمیں مظاہرہ کرنا چاہیئے۔اللہ کا مال تھا اللہ لے گیا ہے اجر کی امید رکھو،ہماری دُعا ہے کہ مرحوم کو لحد میں اتارنے پے پہلے اللہ کریم کے فرشتے جنتی لباس پہنا کر جنت کا دروازہ کھول دیں اور لحد کو حد نگاہ تک کشادہ فرما دیں۔٭اِنَا لِلّہِ وَ اِنَا اِلَیہِ رَاجِعُونَ٭(آمین ثم آمین)